Ya Rab Gham-E-Hijraan Mein



Ya Rab Gham-E-Hijraan Mein, Itna Tu Kiya Hota
Jo Haath Jiger Per Hai, Woh Dast-E-Dua Hota

Ik Ishq Ka Gham Afat Aur Uss Oe Yeh Dil Afat
Yan Gham Na Diya Hota, Yan Dil Na Diya Hota

Nakaam Tammana,Dil Iss Soch Mein Rehta Hai
Yun Hota Tu Kya Hota, Yun Hota Tu Kya Hota?

Umeed Tu Bandh Jaati, Taskeen Tu Ho Jaati
Waada Na Wafaa Karte ,Waada Tu Kya Hota

Ghairoon Se Kaha Tumne, Ghairoon Se Suna Humne
Kuch Humse Kaha Hota, Kuch Humse Suna Hota

Poet : Charagh Hassan Hasrat

Urdu Version:



یا رب غمِ ہِجراں میں اِتنا تو کِیا ہوتا
جو ہاتھ جِگر پر ہے وہ دستِ دُعا ہوتا

ایک عِشق کا غم آفت اور اُس پہ یہ دِل آفت
یا غم نہ دیا ہوتا یا دِل نہ دیا ہوتا

غیروں سے کہا تم، نے غیروں سے سُنا تم نے
کچھ ہم سے کہا ہوتا، کچھ ہم سے سُنا ہوتا

ناکامِ تمنّا دِل اِس سوچ میں رہتا ہے
یوں ہوتا تو کیا ہوتا، یوں ہوتا تو کیا ہوتا

امّید تو بندھ جاتی، تسکین تو ہوجاتی
وعدہ نہ وفا کرتے، وعدہ تو کِیا ہوتا

(چراغ حسن حسرت )

Share By : Muhammad Saeed

Tags: , , , , ,

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *